یہ تحریر العربية (عربی) English (انگریزی) Русский (رشیئن) ไทย (تھائی) 简体中文 (چائینیز) میں بھی دستیاب ہے۔

مراقبہ

ذہنی سکون کے لئے مراقبہ کیجئے

بے قراری، عدم سکون اور اضطراب سے رستگاری حاصل کرنے کے لئے اسلاف سے جو ہمیں ورثہ ملا ہے اس کانام مراقبہ ہے۔ مراقبہ کے ذریعے ہم اپنے اندر مخفی صفات کو منظر عام پرلاسکتے ہیں۔ خوف و دہشت میں مبتلا،عدم تحفظ کے احساس میں سسکتی اور مصائب و آلام میں گرفتارنوع انسانی کے لئے مراقبہ ایک ایسا لائحہ عمل ہے جس پر عمل پیرا ہوکر ہم اپنا کھویا ہوا اقتدار دوبارہ حاصل کر کے زندہ قوموں کی صفوں میں ممتاز مقام حاصل کر سکتے ہیں ۔

جنگ خندق

سیدنا علیہ الصلوۃ والسلام جس وقت مدینۂ منورہ میں رونق افروز ہوئے اس وقت مدینہ کا رقبہ تقریباً تیس (۳۰) کلومیٹر تھا۔ شہر میں بہتر(۷۲)قلعے تھے۔ جن میں انسٹھ (۵۹) قلعے یہودیوں کے تھے اور تیرہ (۱۳) قلعے مدینہ کے اعراب کے تھے۔ آبادیاں قبیلوں میں بٹی ہوئی

⁠⁠⁠حوالہ : محمد الرّسول اللہ(صلی اللہ علیہ وسلم) جلد دوئم

اذان

ہر مذہب میں اپنے پیروکاروں کو متوجہ کرنے کے لئے کوئی نہ کوئی طریقہ رائج ہے، کہیں گھنٹہ اورگھڑیاں بجا کر لوگوں کو پرستش اور عبادت کے لئے جمع کیا جاتا ہے تو کہیں سنکھ بجا کر پجاریوں کو پوجا پاٹ کی دعوت دی جاتی ہے۔ اور لوگوں کو ایک مرکز پر جمع کیا جاتا ہے

⁠⁠⁠حوالہ : کشکول

پُرکشش آنکھیں

سورج طلوع ہونے کے بعد جب دھوپ تیز ہو جائے ایک سو مرتبہ یَا ظَاھِرُ پڑھ کر ہاتھوں کی آٹھوں انگلیوں پر دم کریں اور ان انگلیوں کو اپنی آنکھوں پر پھیر لیں۔ آنکھیں انشاء اللہ خوبصورت اور پرکشش ہو جائیں گی۔

⁠⁠⁠حوالہ : روحانی نماز

مفرد لہریں-مرکّب لہریں

ہر جسمانی وجود کے اوپر ایک اور جسم ہے۔ اس جسم کو صوفیاء ہیولیٰ کہتے ہیں۔ روحانی آنکھ اس جسم کے طول و عرض اور جسم میں تمام خدوخال ہاتھ، پیر، آنکھ، ناک، دماغ کا بھی مشاہدہ کرتی ہے۔ نہ صرف مشاہدہ کرتی ہے بلکہ ان کے اندر روشنیوں کے ٹھوس پن کو بھی محسوس کرت

⁠⁠⁠حوالہ : احسان و تصوف

ترتیب و پیشکش

دورِ حاضر کے روحانی استاد اور بزرگ مرشد کریم حضرت خواجہ شمس الدین عظیمی صاحب مدّ ظلّہ العالی کے کتابچوں پر مبنی تین کتابیں 1۔ اسم اعظم – (19 کتابچے) – 1995-7-9 2۔ قوس قزح – (14 کتابچے) – 2003-01-27 3۔ محبوب بغل میں – (13 کتابچے) – 2003-1-27 آپ نے پڑھی

⁠⁠⁠حوالہ : موت اور زندگی

یقین کا پیٹرن

علم یقین کا پیٹرن ہے۔ ایسا پیٹرن جس پر زندگی رواں دواں ہے، حیات وممات قائم ہے، اور جس پر ترقی وارتقاء موجود ہے۔

⁠⁠⁠حوالہ : احسان و تصوف

قانون

عورت میں ظاہر رخ عورت کے خدوخال میں جلوہ نما ہو کر ہمیں نظر آتا ہے اور باطن رخ وہ ہے جو نظر نہیں آتا۔ اسی طرح مرد کا ظاہر رخ مرد کے خدوخال بن کر ہمارے سامنے آتا ہے اور باطن رخ وہ ہے جو مخفی رہتا ہے۔ مطلب یہ ہے کہ مرد بحثیت مرد جو نظر آتا ہے وہ اس کا ظا

⁠⁠⁠حوالہ : آگہی

بچھڑے ہوئے رشتہ دار

عزیز و اقارب دور دراز علاقوں میں بکھر گئے ہوں اور آپس میں ملاپ کی کوئی صورت نظر نہ آتی ہو تو سورج نکلنے کے آدھے گھنٹے کے بعد غسل کر کے آسمان کی طرف دیکھتے ہوئے دس مرتبہ یَا جَمِعُ پڑھ کر ایک انگلی بند کر لیں۔ پھر دس مرتبہ پڑھ کر دوسری انگلی بند کر لیں۔

⁠⁠⁠حوالہ : روحانی نماز

كائنات کا قلب

ہمارے ذہن میں ہمہ وقت مختلف خیالات اور تصورات وارد ہوتے رہتے ہیں۔ ان میں ہمیں اپنا ارادہ استعمال نہیں کرنا پڑتا۔ ارادے اور اختیار کے بغیر خیالات کڑی در کڑی نقطۂ شعور میں داخل ہوتے رہتے ہیں۔ انسانی زندگی میں خیالات، تصورات، کیفیات اور جو تقاضے کام کرتے

⁠⁠⁠حوالہ : مراقبہ

احسن الخالقین

اللہ تعالیٰ نے قرآن پاک میں بیان فرمایا ہے کہ: ’’انسان ہماری بہترین صناعی ہے۔‘‘ بہترین صناعی کا مفہوم یہ ہے کہ کائنات میں جتنی بھی مخلوقات ہیں انسان ان سب سے افضل ہے، انسان کو مخلوقات میں فضیلت اس بنیاد پر قائم ہے کہ اس کے اندر مخفی علوم جاننے، سمجھنے

⁠⁠⁠حوالہ : صدائے جرس

تصنیفات

تصنیفات : قلندر بابا اولیاؒ نے تین کتابیں تصنیف فرمائی ہیں۔ علم و عرفان کا سمندر: ’’ رباعیات قلندر بابا اولیاؒ ‘‘ اسرار ورموز کا خزانہ: ’ ’ لوح وقلم ‘‘ کشف وکرامات اورماورائی علوم کی توجیہات پر مستند کتاب: ’’ تذکرہ تاج الدین باباؒ ‘‘ رباعیات میں فرماتے

⁠⁠⁠حوالہ : احسان و تصوف

جسمانی اور روحانی صلاحیتوں کی تجدید

حالات جب پیچیدگی اختیار کر لیتے ہیں اور مسئلہ کس طرح حل نہیں ہوتا تو انسان کے اوپر جمود طاری ہو جاتا ہے اس جمو د کی وجہ سے اس کے اندر فہم و فراست اور قوتِ ارادی مفلوج ہو جاتی ہے۔ باوجود کوشش کے وہ کسی نتیجہ پرنہیں پہنچتا ۔ کاروبار زندگی میں ناکام رہتا

⁠⁠⁠حوالہ : روحانی علاج

چھیپ ۔چنبل

ان امراض میں خشک خارش کے لئے تیار کردہ تیل لگانا مفید ہے۔ نیلے رنگ کی شعاعیں ، چھیپ یا چنبل پر دن میں ایک بار ایک گھنٹہ تک ڈالی جائیں ۔ نیلے اورزرد رنگ شعاعوں کا پانی دن میں دوبار پلایا جائے۔

⁠⁠⁠حوالہ : رنگ و روشنی سے علاج

ذات الٰہی

حضور اکرم علیہ الصلوٰۃ والسّلام کا ذہن مبارک اللہ تعالیٰ سے تعلق رکھتا ہے اور ا س پر تجلیاتِ ربانی نازل ہوتی رہتی ہیں جب روحانیت کے راستے پر سفر کرنے والا کوئی شخص حضور علیہ الصلوٰۃ والسّلام سے روحانی طور پر اس درجہ قربت حاصل کر لیتا ہے کہ اس کا ذہن حض

⁠⁠⁠حوالہ : مراقبہ

احسان

احسان کا مطلب ہے کہ بندہ اللہ کو دیکھ کر عبادت کرے یا بندہ اس کیفیت میں ہو کہ اسے اللہ دیکھ رہا ہے۔یقین کے اس درجے کو تصوّف میں مرتبۂِ احسان کہتے ہیں۔اگر آدمی اسلام قبول نہیں کرے گا تو مسلما ن نہیں ہوگا اور اگر مسلمان یقین کی دولت سے مالامال نہیں ہوگا

⁠⁠⁠حوالہ : احسان و تصوف

نیابتِ الہی

سوال: انسان کو اللہ تعالیٰ نے اپنا نائب اور خلیفہ مقرر فرمایا اور اسی سے انسان دوسری مخلوقات سے اشرف ٹھہرا۔ روحانی علوم کی روشنی میں اس کی وضاحت فرمائیں۔ جواب: شعور کا تجزیہ اگر کیا جائے تو ہم اس طرح بیان کرینگے کہ ہر وہ چیز جو متحرک ہے گردش کر رہی ہے

⁠⁠⁠حوالہ : توجیہات

اللہ کا نور

سوال: سرور کائنات حضور علیہ الصلوٰۃ و السلام کا ارشاد گرامی ہے۔ ’’مومن کی فراست سے ڈرو کہ وہ اللہ کے نور سے دیکھتا ہے۔‘‘ حضورﷺ کی اس حدیث شریف کا کیا مطلب ہے؟ جواب: دیکھنے کی ایک طرز یہ ہے کہ اس میں نور شامل ہو جاتا ہے اور آدمی کی آنکھ پر نور کا لینز ف

⁠⁠⁠حوالہ : توجیہات

حضرت آدم ؑ کے قصے میں حکمت

حضرت آدم ؑ کے قصے میں بے شمار حکمتیں موجود ہیں جن میں سے چند یہ ہیں: * حضرت آدم ؑ اور ان کی اولاد کا شرف اس علم اور ان صفات کی بناء پر ہے جو اللہ نے مٹی کے پتلے میں اپنی روح پھونکنے کے بعد اسے عطا کر دی ہیں۔ * انسان اگر اپنی حقیقت (روح) سے واقف ہے اور

⁠⁠⁠حوالہ : محمد الرّسول اللہ(صلی اللہ علیہ وسلم) جلد سوئم

ملت حنیف

حضرت ابراہیم علیہ السلام نے خداداد صلاحیتوں کو استعمال کر کے کائناتی امور پر غور کیا تو سب سے پہلے اپنے سرپرست ’’آذر‘‘ کو سمجھایا پھر جمہور کے سامنے حق کی روشنی کو پیش کیا اور آخر میں نمرود سے مناظرہ کر کے اس کے سامنے حق کو بہتر سے بہتر طریقہ سے پیش کی

⁠⁠⁠حوالہ : آگہی

اللہ کے دوست

سوال: انسانی زندگی کا دارومدار اطلاع پر ہے۔ کیا موت کے بعد بھی اطلاعات کا سلسلہ جاری رہتا ہے؟ تصوف کے حوالے سے تشریح فرمائیں۔ جواب: یہ بات کئی بار پوری طرح واضح کی گئی ہے کہ انسانی زندگی کا دارومدار محض اور محض اطلاع یا خبر کے اوپر ہے۔ ہم جب زندگی میں

⁠⁠⁠حوالہ : توجیہات

براہِ مہربانی اپنی رائے سے مطلع کریں۔

    Your Name (required)

    Your Email (required)

    Subject (required)

    Category

    Your Message (required)