یہ تحریر العربية (عربی) English (انگریزی) Русский (رشیئن) ไทย (تھائی) 简体中文 (چائینیز) میں بھی دستیاب ہے۔

مراقبہ

ذہنی سکون کے لئے مراقبہ کیجئے

بے قراری، عدم سکون اور اضطراب سے رستگاری حاصل کرنے کے لئے اسلاف سے جو ہمیں ورثہ ملا ہے اس کانام مراقبہ ہے۔ مراقبہ کے ذریعے ہم اپنے اندر مخفی صفات کو منظر عام پرلاسکتے ہیں۔ خوف و دہشت میں مبتلا،عدم تحفظ کے احساس میں سسکتی اور مصائب و آلام میں گرفتارنوع انسانی کے لئے مراقبہ ایک ایسا لائحہ عمل ہے جس پر عمل پیرا ہوکر ہم اپنا کھویا ہوا اقتدار دوبارہ حاصل کر کے زندہ قوموں کی صفوں میں ممتاز مقام حاصل کر سکتے ہیں ۔

مراقبہ کا حکم

سوال: آپ روحانی طالب علموں کو معرفت و طریقت میں کامیابی اور غیب کے مشاہدے کے لئے مراقبہ کی تلقین کرتے ہیں اور اس کے بہت سے فوائد بتاتے ہیں اور یہ کہ مراقبہ حضرت محمدﷺ کی غار حرا میں پہلی سنت ہے جبکہ ہم دیکھتے ہیں کہ حضرت محمدﷺ نے اپنے پیروکاروں کو مراق

⁠⁠⁠حوالہ : روح کی پکار

رنگوں کا فرق

رنگوں کا فرق بھی یہیں سے شروع ہوتاہے۔ ہلکا آسمانی رنگ بہت ہی کمزور قسم کا وہم پیداکرتاہے، یہ وہم دماغ فضا میں تحلیل ہوجاتاہے اس طرح کہ ایک ایک خلئے میں درجنوں آسمانی رنگ کے پرتو ہوتے ہیں یہ پر تو الگ الگ تاثرات رکھتے ہیں، وہم کی پہلی روخاص کر بہت ہی کم

⁠⁠⁠حوالہ : رنگ و روشنی سے علاج

نکسیر

نیلا پانی ناک میں چڑھانے سے، نکسیر اگر خون میں حدت کی وجہ سے ہوتو بند ہو جاتی ہے۔ نکسیر کے پرانے مریضوں کو ایک ہفتہ تک سوتے وقت ایک خوراک نیلے پانی کی پلانے سے نکسیر ہمیشہ ہمیشہ کے لئے ختم ہو جاتی ہے۔

⁠⁠⁠حوالہ : رنگ و روشنی سے علاج

توکّل اور بھروسہ

عام حالات میں جب إستغناءکا تذکرہ کیا جاتا ہے تو اس کا مطلب یہ ہوتا ہے کہ اللہ کے اوپر کتنا توکل اور بھروسہ ہے۔ توکل اور بھروسہ کم و بیش ہر آدمی کی زندگی میں داخل ہے لیکن جب ہم توکل اور بھروسے کی تعریف کرتے ہیں تو ہمیں بجز اس کے کہ کچھ نظر نہیں آتا کہ ہ

⁠⁠⁠حوالہ : قلندر شعور

استغنا کی تعریف

قانون یہ ہے کہ استغنا یقین کے بغیر پیدا نہیں ہوتا اور یقین کی تکمیل مشاہدے کے بغیر نہیں ہوتی اور جس آدمی کے اندر استغنا نہیں ہوتا اس کا تعلق مادی دنیا (اسفل) سے زیادہ رہتا ہے۔ اور جس بندے کے اندر استغنا نہیں ہوتا اس کا ذہن بے یقینی اور وسوسوں میں گھرا

⁠⁠⁠حوالہ : محمد الرّسول اللہ(صلی اللہ علیہ وسلم) جلد سوئم

زخم کا نشان

رات کے وقت میں حضور بابا صاحب ؒ کی کمر دبا رہا تھا۔ پسلیوں کے اوپر جب ہاتھ پڑا تو حضور بابا صاحب ؒ کو تکلیف محسوس ہوئی۔ کرتا اٹھا کردیکھا تو تقریباً چار پانچ انچ کا زخم تھا۔ میں یہ دیکھ کر بے قرار ہوگیا اور پوچھا کہ یہ کیسا زخم ہے، حضور ؟ فرمایا۔’’ میں

⁠⁠⁠حوالہ : تذکرہ قلندر بابا اولیاءؒ

ایک ذات

اللہ نے انسان کو اپنا نائب بنایا ہے ۔ اس کے اندر اپنی صفات کا علم پھونکا ہے۔ اس کو اپنی صورت پر تخلیق کیا ہے۔ نائب کا مفہوم یہ نہیں ہے کہ اگر ایک مملکت کا صدر اپنے اختیارات کو استعمال کرنے میں کا غذ قلم کا محتاج نہ ہو تو اس کا نائب اختیارات استعمال کرن

⁠⁠⁠حوالہ : کشکول

بی بی میمونہؒ

حضرت ابراہیم بن احمد خواصؒ کی بہن بی بی میمونہؒ تقویٰ، توکل، زہد اور عبادت میں کمال درجے پر فائز تھیں۔ ایک مرتبہ کسی نے گھر کا دروازہ کھٹکھٹایا اور پوچھا: “ابراہیم خواص ہیں؟” بی بی میمونہؒ نے کہا: “وہ باہر گئے ہوئے ہیں۔” ایک شخص نے پوچھا: “کب واپس آئیں

⁠⁠⁠حوالہ : ایک سو ایک اولیاء اللہ خواتین

بسم اللہ کی زکوٰۃ

سوال: امید ہے آپ خیریت سے ہونگے۔ پروردگار عالم آپ کو صحت عنایت فرمائے، آپ جس طرح انسانیت کی بے لوث خدمت کر رہے ہیں اس کا اجر انشاء اللہ بارگاہ محمدﷺ وآل محمدﷺ سے ضرور ملے گا۔ خط تحریر کرنے کا سبب یہ ہے کہ میں نے ایک کتاب میں آیت بسم اللّٰہ الرحمٰن الرح

⁠⁠⁠حوالہ : روحانی ڈاک (جلد اوّل)

جن

سوال: میں حافظ قرآن ہوں۔ کبھی کبھی رات کو ایسا ہوتا ہے کہ کوئی چیز دبا لیتی ہے۔ محسوس ہوتا ہے کہ میں جاگ رہا ہوں مگر اس چیز کے دفاع کی قوت بالکل سلب ہو جاتی ہے اور اس دوران یوں ہوتا ہے کہ میں اپنا ہاتھ منہ میں ڈال کر انگلی کو دانتوں سے چباتا ہوں تو یوں

⁠⁠⁠حوالہ : روحانی ڈاک (جلد اوّل)

علم ‘‘لا’’ اور علم ‘‘اِلّا’’

جب ہمیں ایک چیز کی معرفت حاصل ہو گئی، خواہ وہ لاعلمی ہی کی معرفت ہو، بَہرصورت معرفت ہے اور ہر معرفت لوحِ محفوظ کے قانون میں ایک حقیقت ہُوا کرتی ہے۔ پھر بغیر اس کے چارہ نہیں کہ ہم لاعلمی کی معرفت کا نام بھی علم ہی رکھیں۔ اہل تصوّف لا علمی کی معرفت کو عل

⁠⁠⁠حوالہ : لوح و قلم

انبیاء کی طرزِ فکر

ترقی اور تنزل جب زیربحث آتا ہے تو ذہن اس طرف بھی متوجّہ ہوتا ہے کہ آخر ترقی یا تنزل میں کون سے عوامِل کار فرما ہیں۔ ابھی ہم بتا چکے ہیں کہ اِنفرادی یا اِجتماعی جدّوجہد کے نتیجے میں ترقی نصیب ہوتی ہے۔ اور اِنفرادی یا اِجتماعی تساہُل اور عَیش پسندی کے نت

⁠⁠⁠حوالہ : قلندر شعور

سیرتِ طَیّبہؐ پر اَیوانِ اِقبال میں خطاب

ربیع الاوّل کے مبارک مہینہ میں بمقام ایوانِ اقبال لاہور میں مراقبہ ہال لاہور کے زیرِ اہتمام حضور نبی اکرم ﷺ کی سیرت طیبہ پر مورخہ ۱۱ مارچ ۲۰۰۶ء کو ایک شاندار اجتماعی پروگرام کا انعقاد کیا گیا۔ سیرت طیبہ کے اس پروگرام میں پاکستان کی مختلف یونیورسٹیز کے

⁠⁠⁠حوالہ : خطباتِ لاہور

ایک ترکیب

دو ڈولفن ایک سانپ نما مچھلی اِیل (Eel) کے ساتھ کھیل رہی تھیں اور اس کا پیچھا کرکے اسے پکڑنے کی کوشش کر رہی تھیں۔ چالاک اِیل نے ڈولفنوں سے بچنے کیلئے اچانک غوطہ لگایا اور ایک سوراخ میں گھس کر پناہ گُزیں ہو گیا۔ اب ذرا ڈولفن کی ذہانت ملاحظہ فرمائیں کہ ان

⁠⁠⁠حوالہ : قلندر شعور

اشرف المخلوقات

مختصر طور پر زندگی کا تذکرہ کیا جائے تو یہ کہنا مناسب ہے کہ زندگی جذبات سے تعبیر ہے یعنی زندگی بیشمار جذبات پر رواں دواں ہے اور حواس کے دوش پر سفر کر رہی ہے۔ ان جذبات کو کنٹرول کرنا بھی حواس کے ذریعے ہی ممکن ہے۔ مثال۔۔۔۔۔۔ایک آدمی کو پیاس لگی۔ پیاس ایک

⁠⁠⁠حوالہ : صدائے جرس

بھائی بھائی

اللہ تعالیٰ نے قرآن پاک میں مومن مردوں اور عورتوں کے متعلق فرمایا ہے کہ: ’’مومن مرد اور مومن عورتیں آپس میں ایک دوسرے کے دوست اور معاون ہیں۔‘‘ (توبہ) محبت و الفت، باہمی تعاون، یگانگت اور خلوص مسلم معاشرے کی مثالی خصوصیات ہیں۔ مومنین کی ایک دوسرے سے محب

⁠⁠⁠حوالہ : تجلیات

بڑھاپے میں کم سنائی دینا

عشاء کی نماز کے بعد اکتالیس ۴۱ بار فَسَوّٰھُنَ سَبْعَ سَمٰواتِ وَالْاَ رْضِ ثُمَّ اسْتَوی عَلَی ٰالْعَرْشِّ پڑھکر ہاتھو ں پر دم کر کے تین مرتبہ ہاتھ چہرے پر پھیرلیں ۔ اکتالیس۴۱ روز پورے کرنا ضروری ہیں۔

⁠⁠⁠حوالہ : روحانی علاج

آزادی

ایک مکتبہؑ فکر کا خیال ہے کہ انسان کی خوشی اس میں ہے کہ وہ آزادانہ زندگی گزارے۔ لیکن جب ان لوگوں نے زندگی کے ماہ وسال پر سوچنا شروع کیا تواس نتیجے پر پہنچے کہ انسان کسی بھی حال میں آزاد نہیں ہے کیونکہ ہر مسرؔت کے بعد کسی آفت کا آنا لازمی ہے؛ ہرسکھ اورچ

⁠⁠⁠حوالہ : کشکول

پر اسرار بیماری

سوال: تقریباً 21سال سے ایک عجیب وغریب اور تکلیف دہ بیماری میں مبتلا ہوں۔ میرے سر کی رگوں میں زبردست کھنچاؤ پیدا ہوتا ہے۔ ایسا لگتا ہے جیسے کوئی کھینچ رہا ہو۔ ساتھ ہی سر میں شر شر کی اور کانوں میں بھی اسی طرح کی آوازیں آتی ہیں۔ گذشتہ دو سالوں میں بے ہوش

⁠⁠⁠حوالہ : روحانی ڈاک (جلد اوّل)

عناصر

جدید سائنس کی رو سے آدمی ایک سو چھبیس عناصر سے مرکؔب ہے ۔ آگ، پا نی، ہوا، مٹی، ہائیڈروجن ،ریڈیم، کاربن، نا ٹیروجن ۔۔۔ وغیرہ غرض یہ ہے کہ جتنے بھی عناصر مل کر کسی مادؔے کی تشکیل و تخلیق کرتے ہیں وہ سب آدمی کے اجزائے ترکیبی میں بھی شامل ہیں ۔ جب ہم مادؔی

⁠⁠⁠حوالہ : کشکول

براہِ مہربانی اپنی رائے سے مطلع کریں۔

    Your Name (required)

    Your Email (required)

    Subject (required)

    Category

    Your Message (required)