حضرت شاہ گل حسن شاہؒ

مکمل کتاب : رُوحانی حج و عُمرہ

مصنف : خواجہ شمس الدین عظیمی

مختصر لنک : https://iseek.online/?p=14524

شاہ گل حسن شاہؒ قلندر پانی پتی مؤلف’’تذکرہ غوثیہ‘‘ نے حضرت سید غوث علی شاہ پانی پتیؒ کی ہدایت پر ’’قصیدہ بردہ‘‘ یاد کیا۔
بردہ شریف پڑھنے سے آپ کو کئی بار حضورﷺ کی زیارت نصیب ہوئی۔ ایک مرتبہ عالم رویا میں دیکھا کہ دریا و صحرا اور کوہ بیاباں طے کرتے ہوئے ریگستان میں بے ہوش ہو کر گر پڑے ہیں۔ حضورﷺ ایک جماعت کے ساتھ تشریف لائے اور آپ کے سر کو اٹھا کر زانوے مبارک پر رکھا۔ چہرے سے گرد و غبار صاف کیا۔ آپ نے رو کر عرض کیا کہ میری داد رسی کیجئے۔
رسول اللہﷺ نے فرمایا:
’’گھبراؤ نہیں۔ اللہ تعالیٰ اپنا فضل کرے گا اور تمہارے سارے مقاصد پورے ہو جائیں گے۔ ابھی وقت نہیں آیا۔ کچھ عرصے بعد منزل مقصود تک پہنچ جاؤ گے۔‘‘
آنکھ کھلنے پر شاہ صاحب کو سنایا تو انہوں نے فرمایا:
’’مبارک ہو۔ یہ حال تو ہم پر بھی نہیں گزرا۔ تم کو حج نصیب ہو گا اور مدینہ منورہ میں ظاہری آنکھوں سے حبیب خداﷺ کو دیکھو گے اور اس خواب کی واردات تم پر بیداری میں گزرے گی مگر تم پہچانو گے نہیں۔‘‘
مولانا گل حسن صاحبؒ کچھ عرصے بعد حج بیت اللہ کے لئے گئے۔ تو آپ نے سوچا مدینہ رسول کی زیارت کے لئے سوار ہو کر جانا بے ادبی ہے، پیدل روانہ ہوئے۔ راستہ میں ایک پیر میں پھوڑا نکل آیا۔ ٹانگ سوجھ گئی، چلنا دوبھر ہو گیا۔ درد کی شدت سے بے تاب ہو ریگستان میں بے ہوش ہو گئے۔ ہوش آیا تو خیال کیا کہ زندگی پوری ہو چکی ہے۔ افسوس روضہ رسولﷺ کی زیارت نصیب نہ ہو سکی۔ آنکھوں میں آنسو تیرنے لگے۔ یکبارگی ایک طرف سے گرد و غبار بلند ہوا اور جماعت نمودار ہوئی جو وردیاں پہنے ہتھیار لگائے گھوڑوں پر سوار تھی۔ سردار گھوڑے سے اترے اور آپ کے سر کو زانو پر رکھ کر رومال سے چہرہ صاف کیا اور ٹانگ پر ہاتھ پھیرا۔
ہاتھ لگتے ہی درد ختم ہو گیا۔ اس کے بعد تسلی اور تشفی دی اور ایک سوار کو حکم دیا کہ اس کو قافلہ میں پہنچا دو اور فلاں شخص کو ہدایت کر دو کہ آرام اور سہولت سے مدینہ لے جائے۔ راستہ میں بار بار اہل قافلہ نے آپ کی بڑی خاطر مدارات کی۔ جب مدینہ طیبہ پہنچے تو خواب یاد آیا۔

یہ مضمون چھپی ہوئی کتاب میں ان صفحات (یا صفحہ) پر ملاحظہ فرمائیں: 161 تا 162

رُوحانی حج و عُمرہ کے مضامین :

ِ 1.1 - مکہ بحیثیت مرکز  ِ 1.2 - امیرِ حج  ِ 1.3 - انبیائے کرامؑ کی قبور  ِ 1.8 - غُسلِ کعبہ  ِ 1.11 - رُکن یمانی  ِ 1.4 - مکہ کے نام  ِ 1.9 - حجرِاسود  ِ 1.16 - فضائلِ حج  ِ 1.5 - بیت اللہ شریف کے نام  ِ 1.6 - مسجد الحرام  ِ 1.10 - ملتزم  ِ 1.7 - مقاماتِ بیت الحرام  ِ 1.12 - میزاب  ِ 1.13 - حطیم  ِ 1.13 - حطیم  ِ 1.14 - مقامِ ابراہیمؑ  ِ 1.15 - زم زم  ِ 1.12 - میزاب  ِ 1.8 - غُسلِ کعبہ  ِ 2.2 - عُمرہ  ِ 2.6 - طواف کی مکمل دعائیں اور نیت  ِ 2.7 - مقام مُلتزم پر پڑھنے کی دعا  ِ 2.10 - سعی کے سات پھیرے اور سات خصوصی دعائیں  ِ 2.14 - ۹ ذی الحجہ ۔ حج کا دوسرا دن  ِ 2.15 - وقوفِ عرفات  ِ 2.17 - ۱۰ذی الحجہ۔۔۔حج کا تیسرا دن  ِ 2.21 - دربارِ رسالتﷺ کی فضیلت  ِ 2.3 - زم زم  ِ 2.11 - مناسکِ حج  ِ 2.1 - حج اور عمرے کا طریقہ  ِ 2.19 - ۱۲ذی الحجہ۔۔۔حج کا پانچواں دن  ِ 2.4 - سعی صفا و مروہ  ِ 2.5 - سعی کا آسان طریقہ  ِ 2.8 - مقام ابراہیمؑ کی دعا  ِ 2.9 - سعی کی مکمل دعائیں اور نیت  ِ 2.12 - ایامِ حج  ِ 2.13 - 8 ذی الحجہ۔ حج کا پہلا دن  ِ 2.16 - عرفات سے مزدلفہ روانگی  ِ 2.18 - ۱۱ذی الحجہ۔۔۔حج کا چوتھا دن  ِ 2.20 - طوافِ وِداع  ِ 3.4 - طواف کی حکمت  ِ 3.8 - چالیس نمازیں ادا کرنے کی حکمت، حکمتِ طواف، حدیث مبارک  ِ 3.1 - ارکان حج و عمرہ کی حکمت  ِ 3.2 - کنکریاں مارنے کی حکمت  ِ 3.3 - سعی کی حکمت  ِ 3.5 - حلق کرانے کی حکمت  ِ 3.6 - احرام باندھنے کی حکمت  ِ 3.7 - آب زم زم کی حکمت  ِ 4.6 - حضرت ابو یزیدؒ  ِ 4.15 - حضرت ابو سعید خزازؒ  ِ 4.23 - خواجہ معین الدین چشتیؒ  ِ 4.27 - ڈاکٹر نصیر احمد ناصر  ِ 4.33 - حضرت حاتم اصمؒ  ِ 4.43 - حضرت داتا گنج بخشؒ  ِ 4.47 - حضرت خواجہ محمد معصومؒ  ِ 4.1 - مشاہدات انوار و تجلیات  ِ 4.2 - مشاہدات و کیفیات – حضرت امام باقرؒ  ِ 4.4 - مشاہدات و کیفیات – شیخ اکبر ابن عربیؒ  ِ 4.7 - حضرت عبداللہ بن مبارکؒ  ِ 4.9 - صوفی ابو عبداللہ محمدؒ  ِ 4.10 - حضرت احمد بن ابی الحواریؒ  ِ 4.11 - شیخ نجم الدین اصفہانیؒ  ِ 4.13 - شیخ حضرت یعقوب بصریؒ  ِ 4.14 - حضرت ابوالحسن سراجؒ  ِ 4.5 - حضرت ابو علی شفیق بلخیؒ  ِ 4.8 - حضرت شیخ علی بن موفقؒ  ِ 4.16 - حضرت عبداللہ بن صالحؒ  ِ 4.12 - حضرت ذوالنون مصریؒ  ِ 4.17 - حضرت لیث بن سعدؒ  ِ 4.18 - حضرت شیخ مزنیؒ  ِ 4.20 - حضرت جنید بغدادیؒ  ِ 4.21 - حضرت شیخ عثمانؒ  ِ 4.19 - حضرت مالک بن دینارؒ  ِ 4.22 - حضرت شبلیؒ  ِ 4.24 - حاجی سید محمد انورؒ  ِ 4.25 - مولانا محب الدینؒ  ِ 4.26 - شیخ الحدیث مولانا محمد ذکریاؒ  ِ 4٫28 - حضرت علیؓ  ِ 4٫29 - حضرت عائشہؓ  ِ 4.30 - حضرت بلالؓ  ِ 4.31 - حضرت ابراہیم خواصؓ  ِ 4.32 - شیخ ابوالخیر اقطعؒ  ِ 4.34 - شیخ عبدالسلام بن ابی القاسمؒ  ِ 4٫36 - حضرت سفیان ثوریؒ  ِ 4٫37 - شیخ ابو نصر عبدالواحدؒ  ِ 4.38 - حضرت ابو عمران واسطیؒ  ِ 4.39 - حضرت سید احمد رفاعیؒ  ِ 4.40 - حضرت شیخ احمد بن محمد صوفیؒ  ِ 4.41 - حضرت شاہ ولی اللہؒ  ِ 4.42 - حضرت آدم بنوریؒ  ِ 4.44 - حضرت شاہ گل حسن شاہؒ  ِ 4.46 - حضرت خواجہ محمد سعیدؒ  ِ 4.48 - حضرت حاجی امداد اللہ مہاجر مکیؒ  ِ 4.45 - پیر سید جماعت علی شاہؒ  ِ 4.49 - شیخ الحدیث حضرت مولانا سید بدر عالم میرٹھیؒ  ِ 4.50 - حضرت مہر علی شاہؒ  ِ 4.51 - شیخ ابن ثابتؒ  ِ 4٫52 - حضرت مولانا سید حسین احمد مدنیؒ  ِ 44 - مناسکِ حج
سارے دکھاو ↓

براہِ مہربانی اپنی رائے سے مطلع کریں۔

    Your Name (required)

    Your Email (required)

    Subject (required)

    Category

    Your Message (required)