دال بھات

کتاب : سوانح حیات بابا تاج الدین ناگپوری رحمۃ اللہ علیہ

مصنف : سہیل احمد عظیمی

مختصر لنک : http://iseek.online/?p=14707

متھراپرشاد امراؤتی والے کہتے تھے۔ـــ باباصاحبؒ کی غلامی پر پہلے بھی بہت سے ہندوبھائی مجھے طعنہ دیتے تھے۔ میرے گھروالے کہتے تھے کہ تیرا دھرم بھرشٹ ہوگیا۔ یہ لعنت ملامت اس وقت اور بھی زیادہ ہوگئی جب میرا دماد مرض الموت میں مبتلا ہوا۔ میری بیوی نے مجھ سے کہا۔’’تم نے اپنادھرم توخراب کر ہی لیا۔ اب دنیا بھی خراب ہونے والی ہے۔ ایک بیٹی ہے، وہ بھی صبح وشام میں بیوہ ہونے والی ہے۔ آخر تمہارے بابا کس دن کام آئیں گے؟ تم ان کی بڑی کرامتیں بیان کر تے رہتے ہو۔ اپنے داماد کو تو موت سے بچاؤ۔‘‘

بیوی کی بات تیر کی طرح میرے دل میں لگی۔ میں نے کہا اس کو بس میں رکھ کر ناگپور لے چلو۔ ڈاکٹروں نے کہایہ کچھ ہی دنوں کا مہمان ہے، اگر مارنے کی جلدی ہے تو ضرور لے جاؤ۔ دوسرے لوگوں نے بھی بہت سمجھایا لیکن میں نہیں مانا۔ میں نے ان سے کہہ دیا کہ اسے باباصاحب سے ٹھیک کرا کے دم لوں گا۔ ورنہ پھر تمہیں اپنی شکل نہیں دکھاؤں گا۔

مختصر یہ کہ میرے گھر والوں نے میرے داماد کو بستر پر ڈال کر بس میں لٹا دیا اورڈاکٹر کو ساتھ لے کر شکردرہ پہنچے۔ میں بس سے اتر کرسیدھا باباصاحبؒ کی خدمت میں حاضر ہوا اور جاتے ہی عرض کیا۔ ’’بابا! میں اپنے داماد کو ساتھ لایا ہوں جو چند لمحوں کا مہمان ہے۔ یا تو یہ اچھا ہوجائے ورنہ آپ کامنہ یہاں بھی کالا، وہاں بھی کالا۔‘‘

میری یہ گستاخانہ بات سن کر باباصاحبؒ نے ایک ہاتھ سے میرا ہاتھ پکڑااور دوسرا ہاتھ  مجھے مارنے کے لئے اٹھایا اور فرمایا۔’’کیاکہا؟‘‘

میں نے کہا۔’’بابا چاہے مارو، چاہے چھوڑو۔ بات یہی ہے جو میں نے کہی ہے۔ میری عزت وآبرو آپ کے ہاتھ میں ہے۔‘‘ باباصاحبؒ نے ہاتھ جھٹک کر فرمایا۔’’جا، دال بھات کھلا، اچھا ہوجاتا ہے۔‘‘

میں واپس بھاگا اور دال بھات تیار کرکے اس کو کھلایا۔ تمام لوگ میری اس حرکت کو دیوانہ پن سمجھ رہے تھے کیوں کہ پیچش کے مریض کو آخری اسٹیج پر جب کہ پانی بھی ہضم نہیں ہوتا۔ دال بھات کھلانا کوئی عقل مندی کی بات نہیں تھی۔ داماد دال بھات کھاتے ہی سوگیا۔ شام کو جاگا اور دوبارہ دال بھات مانگا۔ اورکھاکر پھر رات بھر سوتا رہا۔ اگلے دن وہ بالکل تندرست ہوگیا۔ اور اپنے پیروں سے چل کر باباصاحبؒ کی خدمت میں حاضرہوا۔

یہ مضمون چھپی ہوئی کتاب میں ان صفحات (یا صفحہ) پر ملاحظہ فرمائیں: 97 تا 98

سوانح حیات بابا تاج الدین ناگپوری رحمۃ اللہ علیہ کے مضامین :

ِ انتساب  ِ پیش لفظ  ِ اقتباس  ِ 1 - روحانی انسان  ِ 2 - نام اور القاب  ِ 3 - خاندان  ِ 4 - پیدائش  ِ 5 - بچپن اورجوانی  ِ 6 - فوج میں شمولیت  ِ 7 - دو نوکریاں نہیں کرتے  ِ 8 - نسبت فیضان  ِ 9 - پاگل جھونپڑی  ِ 10 - شکردرہ میں قیام  ِ 11 - واکی میں قیام  ِ 12 - شکردرہ کو واپسی  ِ 13 - معمولات  ِ 14 - اندازِ گفتگو  ِ 15 - رحمت و شفقت  ِ 16 - تعلیم و تلقین  ِ 17 - کشف و کرامات  ِ 18 - آگ  ِ 19 - مقدمہ  ِ 20 - طمانچے  ِ 21 - پتّہ اور انجن  ِ 22 - سول سرجن  ِ 23 - قریب المرگ لڑکی  ِ 24 - اجنبی بیرسٹر  ِ 25 - دنیا سے رخصتی  ِ 26 - جبلِ عرفات  ِ 27 - بحالی کا حکم  ِ 28 - دیکھنے کی چیز  ِ 29 - لمبی نکو کرورے  ِ 30 - غیبی ہاتھ  ِ 31 - میڈیکل سرٹیفکیٹ  ِ 32 - مشک کی خوشبو  ِ 33 - شیرو  ِ 34 - سرکشن پرشاد کی حاضری  ِ 35 - لڈو اور اولاد  ِ 36 - سزائے موت  ِ 37 - دست گیر  ِ 38 - دوتھال میں سارا ہے  ِ 39 - بدکردار لڑکا  ِ 40 - اجمیر یہیں ہے  ِ 41 - یہ اچھا پڑھے گا  ِ 42 - بارش میں آگ  ِ 43 - چھوت چھات  ِ 45 - ایک آدمی دوجسم۔۔۔؟  ِ 46 - بڑے کھلاتے اچھے ہو جاتے  ِ 47 - معذور لڑکی  ِ 48 - کالے اور لال منہ کے بندر  ِ 49 - سونا بنانے کا نسخہ  ِ 50 - درشن دیوتا  ِ 51 - تحصیلدار  ِ 52 - محبوب کا دیدار  ِ 53 - پانچ جوتے  ِ 54 - بیگم صاحبہ بھوپال  ِ 55 - فاتحہ پڑھو  ِ 56 - ABDUS SAMAD SUSPENDED  ِ 57 - بدیسی مال  ِ 58 - آدھا دیوان  ِ 59 - کیوں دوڑتے ہو حضرت  ِ 60 - دال بھات  ِ 61 - اٹیک، فائر  ِ 62 - علی بردران اورگاندھی جی  ِ 63 - بے تیغ سپاہی  ِ 64 - ہندو مسلم فساد  ِ 65 - بھوت بنگلہ  ِ 66 - اللہ اللہ کر کے بیٹھ جاؤ  ِ 67 - شاعری  ِ 68 - وصال  ِ 69 - فیض اور فیض یافتگان  ِ 70 - حضرت انسان علی شاہ  ِ 71 - مریم بی اماں  ِ 72 - بابا قادر اولیاء  ِ 73 - حضرت مولانا محمد یوسف شاہ  ِ 74 - خواجہ علی امیرالدین  ِ 75 - حضرت قادر محی الدین  ِ 76 - مہاراجہ رگھو جی راؤ  ِ 77 - حضرت فتح محمد شاہ  ِ 78 - حضرت کملی والے شاہ  ِ 79 - حضرت رسول بابا  ِ 80 - حضرت مسکین شاہ  ِ 81 - حضرت اللہ کریم  ِ 82 - حضرت بابا عبدالرحمٰن  ِ 83 - حضرت بابا عبدالکریم  ِ 84 - حضرت حکیم نعیم الدین  ِ 85 - حضرت محمد عبدالعزیز عرف نانامیاں  ِ 86 - نیتا آنند بابا نیل کنٹھ راؤ  ِ 87 - سکّوبائی  ِ 88 - بی اماں صاحبہ  ِ 89 - حضرت دوّا بابا  ِ 90 - نانی صاحبہ  ِ 91 - حضرت محمد غوث بابا  ِ 92 - قاضی امجد علی  ِ 93 - حضرت فرید الدین کریم بابا  ِ 94 - قلندر بابا اولیاء  ِ 94.1 - سلسلۂ عظیمیہ  ِ 94.2 - لوح و قلم  ِ 94.3 - نقشے اور گراف  ِ 94.4 - رباعیات
سارے دکھاو ↓

براہِ مہربانی اپنی رائے سے مطلع کریں۔

Your Name (required)

Your Email (required)

Subject (required)

Category

Your Message (required)